Home / پاکستان / ڈالر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح 146 روپے 20 پیسے تک پہنچ گیا
Dollar increased

ڈالر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح 146 روپے 20 پیسے تک پہنچ گیا

اسلام آباد (یواےای اردو) آئی ایم ایف سے کئے گئے معاہدے کے بعد روپے کی بے قدری کا سلسلہ مسلسل جاری ہے اور ڈالر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح 146 روپے 20 پیسے تک پہنچ گیا ہے. ڈالرکے مقابلے میں پاکستانی روپیہ مسلسل نیچے جا رہا ہے، اوپن مارکیٹ میں ڈالر مہنگا ہو نے سے مہنگائی اور افراط زرمیں اضافہ ہوگا.
ایکسچینج کرنسی ایسوسی ایشن کے مطابق اوپن مارکیٹ میں ڈالر 2 روپے 25 پیسے مہنگا ہو گیا ہے ایکسچینج کرنسی ایسوسی ایشن کا مزید کہنا ہے کہ اوپن مارکیٹ میں ڈالر 146 روپے 25 پیسے پر پہنچ گیا جو کہ ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح ہے.

گزشتہ روز اوپن کرنسی مارکیٹ میں پاکستانی روپے کے مقابلے میں امریکی ڈالر کی قیمت خرید 20 پیسے اور قیمت فروخت میں 45 پیسے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا تھا، جس کے نتیجے میں امریکی ڈالر کی قیمت خرید 143 روپے سے بڑھ کر 143 اعشاریہ 20 روپے اور قیمت فروخت 143 اعشاریہ 50 روپے سے بڑھ کر 143 اعشاریہ 95 روپے ہو گئی تھی.

اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی طلب برقرار رہنے کی وجہ سے امریکی ڈالر 45 پیسے اضافے کے بعد 143 روپے 95 پیسے کی سطح پر آگیا تھا، بدھ کو روپے کی مزید بے قدری ہوئی اور ڈالر مزید 2 روپے 25 پیسے مہنگا ہوکر ملکی تاریخ کی بلند ترین 146 روپے 20 پیسے کی سطح پر پہنچ گیا ہے. چند روز قبل حکومت اور آئی ایم ایف کے درمیان قرض کے لیے معاہدہ ہوا تھا جس کے مطابق حکومت کو روپے کی قدر میں کمی کرنا ہے ان خبروں کے منظر عام پر آنے کے بعد گزشتہ 3 روز کے دوران ڈالر کی قدر میں 4 روپے کا اضافہ ہوا ہے. امریکی ڈالر 45 پیسے اضافے کے بعد 143 روپے 95 پیسے کی سطح پر آگیا تھا، بدھ کو روپے کی مزید بے قدری ہوئی اور ڈالر مزید 2 روپے 25 پیسے مہنگا ہوکر ملکی تاریخ کی بلند ترین 146 روپے 20 پیسے کی سطح پر پہنچ گیا ہے.

mobile phone prices

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے