Home / پاکستان / آصف زرداری اور نوازشریف مل کر عمران خان کی حکومت گرا سکتے ہیں

آصف زرداری اور نوازشریف مل کر عمران خان کی حکومت گرا سکتے ہیں

اسلام آباد : معروف تجزیہ نگار حبیب اکرم کا کہنا ہے کہ جب حکومتیں گرنا شروع ہوتیں ہیں تو سب سے پہلے ایک پتہ گرتا ہے اور پھر سارے پتے گر جاتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ بطور سیاسی طالب علم میں یہی کہوں گا کہ آئی ایم ایف سے معاہدے کے بعد عمران خان کی پرابلمز کا آغاز ہوجائے گا.کیونکہ وہ سارے نظام کے لیے ایک بوجھ بنتے جائیں گے۔
وہ خود کو دوبارہ کس طرح سے ایک اثاثہ بناتے ہیں یہ اگلا سوال ہے۔جہاں تک بات حکومت گرانے کی ہے تو اس وقت اگر آصف زرداری، نوازشریف ، مولانا فضل الرحمان اکٹھے ہوجائیں تو یہ حکومت ایک پریس کانفرنس کی مار ہے۔اگر یہ تینوں اکھٹے ہو گئے تو حکومت سمجھیں چند لمحوں میں گئی۔تاہم ان لوگوں کا اکھٹا ہونا کوئی آسان کام نہیں ہے۔
کیونکہ اس سے قبل بھی پیپلز پارٹی نے ن لیگ کی وجہ سے بہت نقصان اٹھانا پڑا ہے۔

بےنظیر بھٹو نے این آر او کی صورت میں راستہ بنایا جس پر چلتے ہوئے نواز شریف ملک میں تشریف لائے۔لیکن پھر اسی راستے کو انہوں نے غلط کہا۔2008ء میں نواز شریف الیکشن لڑنا نہیں چاہ رہے تھے لیکن بینظیر بھٹو اور آصف زرداری ان کا ہاتھ کھینچ کر لے آئے۔لیکن جب الیکشن لڑا تو خود ہی کالا کوٹ پہن کر ان کے خلاف عدالت پہنچ گئے۔اگر آصف زرداری اور بلاول بھٹو چاہئیں تو ان کے ساتھ مل کر حکومت گرا سکتے ہیں تاہم یہ دنوں جماعتیں اس درجے پر اکھٹی نہیں ہو سکتیں۔
جب کہ دوسری جانب دو روز قبل پاکستان مسلم لیگ (ن)کے وفد نے پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئر مین بلاول بھٹو زر داری سے ملاقات کی تھی۔ جس میں ملک کی سیاسی صورتحال ، چیئر مین پی اے سی کے معاملات پر مشاورت کی گئی ۔میڈیا رپورٹ میں بتایا گیا کہ جمعرات کو مسلم لیگ ن کے وفد نے چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری سے ملاقات کی ۔ وفد میں شاہد خاقان عباسی ،ایاز صادق ،خواجہ آصف، سعد رفیق اورمریم اورنگزیب شامل تھیں ۔
پیپلزپارٹی کی طرف سے ملاقات میں سید خورشید احمد شاہ سید نوید قمر بھی موجود تھے ۔ذرائع کے مطابق اجلاس میں ملک کی سیاسی صورتحال، چیئرمین پی اے سی کے معاملات پر مشاورت کی گئی۔پاکستان مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی حکومت کے خلاف ایک پیج پر نظر آتی ہے۔ پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما راناثناء اللہ کا کہنا ہے کہ اگر عید کے بعد اپوزیشن جماعتیں حکومت کی عوام دشمن پالیسوں کے خلاف باہر نہ نکلیں تو لوگ ہمیں ماریں گے اور ہمارے گھروں کا گھیراؤ کریں گے۔
رانا ثناءاللہ کا کہنا ہے کہ عوام کے ساتھ مل کر حکومت کو گرانا پڑ ے گا۔جب کہ پاکستان پیپلز پارٹی کی رہنما شازیہ مری نے بھی راناثناء اللہ کے بیان کی تائید کی جس سے واضح ہوتا ہے کہ دونوں جماعتیں عید کے بعد حکومت کے خلاف احتجاج کرنے کی منصوبہ بندی کر رہی ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے